انٹر نیشنل

بحری طاس میں کسی کی داداگیری کے سامنے گردن نہیں جھکائیں گے،ترکی

انقرہ : ترکی کے صدر رجب طیب ایردوان نے کہا ہے کہ اپنے بحری طاس میں ہم نہ توکسی اور کی داداگیری کے سامنے گردن جھکائیں گے اور نہ ہی پابندیوں اور دھمکی آمیز زبان کی وجہ سے قدم پیچھے ہٹائیں گے، یونان ہمارے طرز عمل سے ہم آہنگ جواب نہیں دے رہا۔ صدر رجب طیب ایردوان نے ضلع ریزے میں ایک تقریب سے خطاب میں کہا ہے کہ ترکی کی حیثیت ذہن و دل گروی رکھے ہوئے ملک سے بڑھ کر ایسے ملک کی حیثیت تک پہنچ گئی ہے کہ جس کے بیانات اور پالیسیوں پر دنیا بھر میں بغور نگاہ رکھی جاتی ہے۔ دو روز قبل جرمن چانسلر اینگلا مرکل اور اس کے بعد یورپی یونین کونسل کے سربراہ چارلس میشل کے ساتھ مذاکرات کی یاد دہانی کرواتے ہوئے انہوں نے کہا ہے کہ "ان مذاکرات کے بعد اٹھائے جانے والے یہ قدم حقیقت تو یہ ہے کہ ترکی اپنے اوپر ہونے والے حملوں کے مقابل ہمیشہ صورتحال کو آسان بنانے اور معاملے کو نرم کرنے کی کوششیں کرتا رہا ہے۔

Related Articles

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Close