کشمیر

مقبوضہ کشمیر، بھارتی ظلم تھم نہ سکا،مزید 4نوجوان شہید

سرینگر: مقبوضہ کشمیر کے ضلع شوپیاں کے علاقے کلوورہ میں بھارتی فوج نے تلاشی اور محاصرے کی کارروائی کے دوران 4حریت پسندوںکو شہید جبکہ ایک کو گرفتار کر لیا۔ساوتھ ایشین وائر کے مطابق پولیس ، فوج اور سی آر پی ایف کی مشترکہ ٹیم نے کلوورہ میں کورڈن اینڈ سرچ سرچ آپریشن شروع کیا۔کشمیر پولیس نے شہادتوں کی تصدیق کی ہے۔شہید نوجوانوں میں البدر کے ضلع کمانڈر شکور پرے اور سہیل بھٹ شامل ہیں۔آپریشن کے دوران علاقے میں انٹرنیٹ سروس بھی بند کر دی گئی۔دریں اثنا ء مقبوضہ کشمیر میں بارہمولہ میں نوپورہ جاگیر کے علاقے میں بھارتی فوج نے جمعہ کی نماز کے بعد سرچ آپریشن شروع کیا، جس میں کئی افراد کو حراست میں لے لیا گیا۔مقبوضہ کشمیر میں انتظامیہ نے 8 اور 10 محرم کے پیشِ نظر تمام اضلاع میں سخت بندشیں نافذ کی ہیں، اس دوران اضافی سکیورٹی اہلکاروں کی تعیناتی کے علاوہ سڑکوں کو سیل کیا گیا ہے۔ساوتھ ایشین وائر کے مطابق مقبوضہ جموں و کشمیر کے دارالحکومت سرینگر میں جمعہ کو پولیس نے 8 محرم کے پیش نظر پابندیاں عاید کی ہیں ۔ اس دوران عزاداری جلوسوں کو نکالنے پر پابندی ہے۔ساوتھ ایشین وائر کے مطابق سرینگر میں کئی مقامات پر عزاداروں نے جلوس نکالنے کی کوشش کی لیکن پولیس کی بھاری تعیناتی کے سبب وہ ناکام ہوئے۔پولیس نے درجنوں عزاداروں کو حراست میں لے کر انہیں مختلف تھانوں میں نظر بند کردیا۔غیر قانونی طور پر بھارت کے زیر قبضہ جموںوکشمیر میں کل جماعتی حریت کانفرنس کے رہنما اور ڈیموکریٹک پولیٹیکل موومنٹ کے چیئرمین خواجہ فردوس نے کہا ہے کہ جموںوکشمیر عالمی سطح پر تسلیم شدہ ایک متنازعہ علاقہ ہے اور تنازعہ کشمیر کا بہترین حل اقوام متحدہ کی قراردادوں میں مضمر ہے ۔ کشمیرمیڈیاسروس کے مطابق خواجہ فردوس نے سرینگر سے جاری ایک بیان میں کہا کہ جموںوکشمیر کے عوام اپنی خواہشات کے منافی تنازعہ کشمیر کا حل ہرگز قبول نہیںکریں گے۔

Related Articles

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Close