کشمیر

عمران اور فاروق کا طرز حکومت مایوس کن، پی ٹی آئی میں نہیں جا رہا،سردار یعقوب

اسلام آباد:سابق صدر و وزیراعظم آزاد جموں و کشمیر سردار یعقوب خان نے کہا ہے کہ وزیراعظم آزاد کشمیر راجہ فاروق حیدر کے خلاف غداری کا مقدمہ درج کرنا قابل مزمت ہے اس مقدمے سے مسئلہ کشمیر پر پاکستان کے اصولی موقف کو شدید نقصان پہنچا ہے تحریک آزادی کشمیر پر منفی اثرات مرتب ہو گے ہندوستان اس اقدام کو ایشو بنا کر تحریک آزادی کشمیر اور پاکستان کے خلاف متحرک ہو چکا ہم الحاق پاکستان کے داعی ہیں اور پاکستان کے جھنڈے تلے تحریک آزادی کشمیر اور کشمیر کی آزادی کے لیے قربانیاں دے رہے ہیں ۔آزادکشمیر کے سابق صدرسابق وزیراعظم اورپاکستان پیپلزپارٹی آزادکشمیرکے مرکزی قائدمحمدیعقوب خان نے کہاکہ برائے مہربانی اداروں کے ذمہ داران گلگت بلتستان کو صوبہ بنانے سے روکیں نہیں تو اوورسیز میں بیٹھے ہوئے بیس لاکھ کشمیری احتجاج شروع کر دیں گے۔ گلگت بلتستان ریاست جموں کشمیر کا حصہ تھا، اب بھی حصہ ہے اور تا قیامت رہے گا۔ میں نے اپنے دور حکومت میں ان علاقوں کو حقوق دینے واضح پیش کش کی تھی۔ کہ میری جگہ صدر ریاست کا عہدہ یہاں کے کسی آدمی کو دیا جائے۔ صدیوں قبل گلگت سے تعلق رکھنے والا یوسف شاہ چک ریاست کشمیر کا حکمران تھا۔ اس کا مطلب ہے کہ صدیوں پہلے یہ علاقے ریاست کا حصہ تھے۔ مہاراجہ کے ز مانے میں پونچھ ہمارے آباواجداد نے جب ہری سنگھ کی فوج کے خلاف ہتھیار اٹھائے تو ساری ریاست میں جی بی واحد علاقہ تھا جہاں پونچھ کے لوگوں کے نقش قدم پر مہارجہ گھنسارہ سنگھ کی فوجوں کے خلاف بھی ہتھیار اٹھے فاتح گلگت کرنل حسن مرزا اور فاتح آزاد کشمیر کیپٹن حسین خان کے درمیان مکمل رابطے تھے 1نومبر 47کو بننے والی گلگت کی حکومت کے صدر راجہ رئیس نے 16نومبر 47کو اپنی حکومت سدھنوتی میں بننے والی آزاد حکومت میں ضم کر دی تھی میں پہلا صدر تھا جو ستر سالوں میں گلگت گیا اور وہاں آزاد کشمیر کے جھنڈے لگے۔ گلگت بلتستان کے طلباء و طالبات کے لیے آزاد کشمیر کے میڈیکل کالجز اور یونیورسٹیوں میں کوٹہ بڑھایا۔ میں پی ٹی آئی میں نہیں جا رہا۔ یہ سب افواہیں ہیں۔ عمران خان اور فاروق حیدر کا طرز حکومت مایوس کن ہے ۔ میرپور کی آج کی حالت دیکھ کر ترس آتا ہے۔ بہت جلدوزیرخارجہ پاکستان سے ملاقات کرکے ان سے پاکستان کی جانب سے نے تیارکیے گئے نقشے اورشاہراہ کشمیرکے نام کی تبدیلی کے حوالے سے بات کریں گے ۔اس کے بعدمیں اپناموقف عوام کے سامنے لائوں گا،۔انہوں نے کہاکہ میں نے ماضی میں بھی پاکستانی قیادت کواپنی الیکشن مہم میں نہیں بلایاحالانکہ ایک مرتبہ یوسف رضاگیلانی میری انتخابی مہم میں آناچاہتے تھے مگرمیں نے ان کوروک دیاتھااورآئندہ بھی میں خودان کے پاس جائوں گاکسی کاسہارالے کرانتخابی مہم نہیں چلائوں گا۔

Related Articles

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Close