کشمیر

مقبوضہ کشمیر کا چپہ چپہ آج بھی آزادی اور پاکستان کے نعروں سے گونج رہا ہے،صدر مسعود

اسلام آباد: صدر آزاد جموں وکشمیر سردار مسعود خان نے اقوام متحدہ کی سلامتی کونسل سے اپیل کی ہے کہ وہ لاک ڈائون سے باہر نکلے اور مقبوضہ کشمیر میں بھارتی فوج کی قتل و غار ت گری، تشدد ، نسل کشی اور نسلی تطہیر کو روکے کیونکہ یہ اقدامات بین الاقوامی قوانین کے تحت جنگی جرائم اور انسانیت کے خلاف کھلی جنگ کے زمرے میں آتے ہیں جن کو انسانی حقوق کی خلاف ورزی کا نام دے کر خوش نما الفاظ کے لبادے میں نہیں چھپایا جا سکتا ہے۔یہ بات انہوں نے لاہور سنٹر فار پیس ریسرچ (ایل سی پی آر) کے زیر اہتمام مقبوضہ جموں وکشمیر کی صورتحال کے حوالے سے ایک آن لائن کانفرنس کے مہمان خصوصی کی حیثیت سے خطاب کرتے ہوئے کہی۔ پاکستان کے سابق سیکرٹری خارجہ چیئرمین ایل سی پی آر شمشاد احمد کی میزبانی میں ہونے والی اس کانفرنس سے سینیٹر شیریں رحمان، سابق سفیر ضمیر اکرم ، جموں وکشمیر انسانی حقوق کونسل کے چیئرمین ڈاکٹر نذیر گیلانی اور مشال ملک نے بھی خطاب کیا۔ اپنے خطاب میں صدر سردار مسعود خان نے کہا کہ بھارت نے گزشتہ سات دہائیوں میں اپنے حامی کشمیری سیاست دانوں کی مدد سے مقبوضہ کشمیر کو بھارتی ریاست میں مدغم کرنے اور کشمیریوں کے دل و دماغ جیتنے کے لئے ہر حربہ استعمال کیا اور اس میں ناکامی کے بعد اب وہ مقبوضہ خطہ کو اپنی نو آبادی بنانے جیسے گھنائونے جرم میں مصروف ہے۔ انہوں نے کہا کہ بھارتی حکمرانوں کی طرف سے تحریض و ترغیب کی ہر پیشکش کو کشمیریوں نے ہمیشہ حقارت سے ٹھکرایا اور مقبوضہ کشمیر کا ہر چپہ چپہ آج بھی آزادی اور پاکستان کے نعروں سے گونج رہا ہے۔

Related Articles

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Close