پاکستان

لیڈی ہیلتھ ورکرز کا ڈی چوک میں دھرنا جاری،حکومت مخالف نعرے بازی

اسلام آباد:لیڈی ہیلتھ ورکرز کا اسلام آباد کے ڈی چوک میں دھرنا جاری ہے ۔ لیڈی ہیلتھ ورکرز کا کہناہے کہ ڈی ایچ او روالپنڈی لیڈی ہیلتھ ورکرز کے دھرنے میں آئے اور خواتین کے ساتھ بدتمیزی کی۔ڈی ایچ او روالپنڈی لیڈی ہیلتھ ورکرز کو ہراساں کیا اور نوکری سے نکالنے کی دھمکی دی۔لیڈی ہیلتھ ورکرز کی جانب سے حکومت کے خلاف نعرے بازی کی گئی انکا کہناہے حکومت ہمیں اسطرح روک نہیں سکتی ہم اپنا حق لے کہ رہے گے۔ دریںاثناء پاکستان میڈیکل ایسوسیشن کے عہدیداروں کا وفد لیڈی ہیلتھ ورکرز کے دھرنے میں شرکت کیلئے ڈی چوک پہنچ گیا ۔دھرناکے شرکاء سے خطاب کرتے ہوئے صدر پاکستان میڈیکل ایسوسی ایشن ڈاکٹر اشرف نظامی نے کہا لیڈی ھیلتھ ورکرز کے ساتھ دھرنے میں بیٹھ کر اظہار یکجہتی کرنے آئے ہیں ۔ لیڈی ھیلتھ ورکرز کو سارے حقوق ملنے چاہئے ۔پی ایم اے سب سے ھمدردی کرنے کے لیئے آئے ہیں ۔ہم آپ لوگوں کے ساتھ ہیں ۔ہماری ایسوسیشن ہر قدم پر آپکا ساتھ دینگی ۔ہماری بہنیں اس وقت روڈز پر بیٹھی ہیں پر حکومت انکا ساتھ نہیں دے رہی ۔بہت افسوس ہے کہ تحریک انصاف کے دور میں ہماری مائیں بہنیں یہاں بیٹھی ہیں ۔عمران خان پاورفل ہے انکو انصاف کرنا چاہئے ۔حکومت غریبوں بیروزگاروں کے مسائل حل کریں ۔امید ہے شام تک آپ سب کے مسائل حل ہونگے۔ ڈاکٹر قیصر سجاد نے کہا بڑی ہشیاری سے الگ میڈیکل ٹربیونل بنایا گیا ۔ ایکٹ کے تحت ڈاکٹرز کو ڈگری کرنے کے بعد ایک اور امتحان دینا ہوگا، میڈیکل ٹربیونل غلطی پر ڈاکٹر کو سات سال سزا دے سکے گی

Related Articles

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Close