کشمیر

ترقیاتی عمل کی موثر مانیٹرنگ اور کام کی رفتار کو تیز کیا جائے،فاروق حیدر کی ہدایت

مظفرآباد:وزیر اعظم آزاد جموں وکشمیر راجہ محمد فاروق حیدرخان کی زیر صدارت تحصیل ہیڈ کوارٹر ہسپتال چکار کی تعمیر کے حوالہ سے اعلیٰ سطحی اجلاس جمعرات کے روز منعقد ہوا ۔ اجلاس میں وزیر صحت ڈاکٹر نجیب نقی، سیکرٹری صحت میجر جنرل احسن الطاف ، پرنسپل سیکرٹری احسان خالد کیانی ، سینٹرل ڈیزائن آفس کے آفیسران ودیگر متعلقین نے شرکت کی ۔ اجلاس میں وزیر اعظم آزادکشمیر کو سینٹرل ڈیزائن آفس نے تحصیل ہیڈ کوارٹر ہسپتال چکار کے نئے ڈیزائن کے حوالہ سے بریفنگ دی۔ اس موقع پر وزیر اعظم نے ہدایت کی کہ چکار ہسپتال کی تعمیر کا کام فوری طور پر شروع کیا جائے ، ہسپتال کیلئے بجٹ میں رقم مختص ہے اور اس کی منظور ی بھی ہو گئی ہے ۔ تحصیل ہیڈ کوارٹر میں سٹیٹ آف دی آرٹ ہسپتال کی تعمیر کی جائے اور تمام ضروری آسامیاں بھی مہیا کی جائیں ۔ وزیر اعظم نے ہدایت کی کہ تحصیل ہیڈ کوارٹرہسپتال میں طبی عملے کے ساتھ ساتھ ڈاکٹر کی رہائش کا بھی انتظام کیا جائے ۔ اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے وزیر اعظم نے کہاکہ آزادکشمیر میں جاری ترقیاتی عمل کی موثر مانیٹرنگ اور کام کی رفتار کو تیز کیا جائے ۔ کا م کے معیار پر کوئی سمجھوتہ نہ کیا جائے ۔ انہوں نے کہا کہ ترقیاتی منصوبہ جات کو مقررہ وقت کے اندر مکمل کیا جائے ،جو ترقیاتی منصوبے وقت پر مکمل نہیں ہوتے ان کی لاگت میں اضافہ ہوتا ہے اس لیے بہر صورت مقررہ مدت کے اندر ترقیاتی منصوبوں کی تکمیل یقینی بنائی جائے ۔ وزیر اعظم نے کہاکہ حکومت آزادکشمیر نے صحت کے شعبہ پر خصوصی توجہ دی ہے ۔ محکمہ صحت کورونا وباء کے دورا ن بھی بہترین کا م کررہا ہے ۔ حکومت نے فری ایمرجنسی سروسز کا اجراء کیا جس سے تمام شہریوں کو بلاتخصیص صحت کی سہولیات میسر آئیں۔ دریں اثناء وزیر اعظم آزادجموں وکشمیر سے سینئر وزیر چوہدری طارق فاروق،وزیر صحت ڈاکٹر نجیب نقی ، وزیر ہائر ایجوکیشن کرنل ریٹائرڈ وقار احمد نور، ممبر اسمبلی پیر سید علی رضا بخاری نے ملاقات کی۔اس موقع پرباہمی دلچسپی اور آزادکشمیر میں جاری ترقیاتی عمل پر تبادلہ خیال کیا گیا۔ علاوہ ازیںوزیر اعظم آزادجموں وکشمیر راجہ محمد فاروق حیدرخان نے بزدل ہندوستانی فوج کی جانب سے سیز فائر لائن سما ہنی پر ایک شہری کو موٹر سائیکل پر سفر کے دوران نشانہ بنانے کی شدید مذمت کرتے ہوئے کہا ہے کہ ہندوستان کی بزدل فوج انسانیت کی تمام حدیں پار کر چکی ہے ۔ معصوم شہریوں کو نشانہ بنانا انتہائی بزدلانہ فعل ہے جس کا سخت نوٹس لیا جانا چاہیے۔ اقوام متحدہ اور انسانی حقوق کے ادارے آنکھیں کھولیں اور سیز فائر لائن پر بزدل ہندوستانی فوج کی جارحیت کا نوٹس لیں۔ انہوں نے کہا کہ ہندوستان کی بزدل فوج افواج پاکستان کا مقابلہ نہیں کر سکتی اس لیے وہ معصوم شہریوں کو نشانہ بناتی ہے۔ انہوں نے کہاکہ سیز فائر لائن پر بسنے والے عوام کے عزم و حوصلے کو سلام پیش کرتا ہوں وہ کسی صورت پیچھے نہیں ہٹیں گے اور افواج پاکستان شانہ بشانہ وطن عزیز کی حفاظت کرینگے۔انہوں نے کہاکہ کشمیریوں کا خون رائیگا ں نہیں جائے گا، بھارت کو کشمیریوں پر ڈھائے جانے والے ظلم کا حساب دینا ہوگا۔

Related Articles

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Close