پاکستان

طالبان کو افغان جنگ میں مکمل فتح ہوئی تو بڑے پیمانے پر خون ریزی ہوگی،عمران خان

اسلام آباد: وزیر اعظم عمران خان نے کہا ہے کہ طالبان کو افغان جنگ میں مکمل فتح ہوئی تو بڑے پیمانے پر خون ریزی ہوگی،امریکہ کو افغانستان چھوڑنے سے قبل سیاسی حل نکالنا ہوگا،طالبان اور دوسرے فریق پر مشتمل اتحادی حکومت تشکیل دینا ہوگی،امریکہ اور سی آئی اے کو افغانستان میں کارروائی کیلئے اپنی سرزمین اور فوجی اڈے فراہم کریں گے نہ ہی فضائی حدود استعمال کی اجازت دی جائے گی ،افغان تنازع کا کوئی فوجی حل نہیں، ہم امن کے شراکت دار ہیں تنازع کے نہیں،پاکستان کا جوہری پروگرام دفاع کے لیے ہے، کسی ملک کے خلاف جارحیت کے لیے نہیں ہے، جوہری ہتھیاروں کے خلاف ہوں، کشمیر کا مسئلہ حل ہوگیا تو ان ہتھیاروں کی ضرورت نہیں رہے گی،چین نے ہمیشہ مشکل وقت میں ہمارا ساتھ دیا،میں نے کبھی نہیں کہا عورتیں برقعہ پہنیں، ہمارے ہاں ڈسکوز اور نائٹ کلب نہیں ہیں، اگر عورت مختصر کپڑے پہنے گی تو اس کا مردوں پر اثر پڑے گا۔ان خیالات کا اظہار وزیر اعظم نے امریکی ٹی وی کو ایک انٹرویو دیتے ہوئے کیا ۔ وزیراعظم نے کہا کہ افغان تنازع کا کوئی فوجی حل نہیں، سیاسی حل کے بغیر افغانستان میں خانہ جنگی کا خطرہ ہے، سیاسی حل یہ ہوسکتا ہے کہ ایک اتحادی حکومت تشکیل دی جائے جس میں طالبان اور دوسرے فریق شامل ہوں۔ جو بھی افغان عوام کی نمائندگی کرتا ہے ہم اس سے رابطہ رکھیں گے،وزیر اعظم نے خدشہ ظاہر کیا کہ اگر طالبان کو افغان جنگ میں مکمل فتح حاصل ہوگئی تو بڑے پیمانے پر خون ریزی ہوگی جس کے نتیجے میں پاکستان سب سے زیادہ متاثر ہوگا، لہذا امریکا کو انخلا سے قبل لازما سیاسی حل نکالنا ہوگا۔

Related Articles

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Close