31

وزیراعظم کا فلاحی ریاست کی جانب اہم اقدام

اسلام آباد: وزیراعظم آزادجموں و کشمیر چوہدری انوارلحق نے کہا ہے کہ ایسے بے سہارہ خواتین و حضرات جن کا کوئی والی وارث نہیں ہے کے لیے 5 ارب کی لاگت سے انڈومنٹ فنڈ قائم کر رہے ہیں جس کے ذریعے ہر مہینے بیس ہزار روپے انہیں ان کے گھروں میں فراہم کئے جائیں گے۔اس انڈومنٹ فنڈ میں معذور افراد،یتیم،ظلاق یافتہ خواتین،اور بزرگ بے سہارہ خواتین و حضرات شامل ہونگے۔فلاحی ریاست کے تصور کو عملی جامہ پہنائیں گے۔وزیراعظم نے سرکاری ملازمتوں میں خصوصی افراد کا کوٹہ اڑھائی فیصد سے بڑھا کرپانچ فیصد کرنے کے احکامات دے دئیے۔وزیراعظم نے ان خیالات کا اظہار خصوصی افراد کے ادارے چراغ منزل کے چیئرمین سعید عباسی اور صدر اشرف عباسی کی قیادت میں چھ رکنی وفد سے بات چیت میں کیا جنہوں نے جموں کشمیر ہاؤس اسلام آباد میں ان سے ملاقات کی۔وفد میں میجر(ر) محمود، رخسانہ میر، ملک اختر اور محسن اعوان بھی شامل تھے۔اس موقع پر پرنسپل سیکرٹری ظفر محمود خان بھی موجود تھے۔وزیراعظم نے چوہدری انوارالحق کی آزاد کشمیر کے ہر ڈسٹرکٹ ہسپتال میں خصوصی افراد کیلئے پانچ بیڈ مختص کرنے کی ہدایت کی۔وزیراعظم نے خصوصی افراد کیلیے ہر ڈسٹرکٹ ہسپتال میں فری علاج معالجہ اور ادویات فری دینے کے احکامات بھی دئیے۔وزیراعظم آزادکشمیر کی ایمز ہسپتال مظفرآباد میں خصوصی افراد کے لیے قائم ری ہیبیلیٹیشن سینٹر کو فعال کرنے کی ہدایت بھی کی تاکہ خصوصی افراد کو بہترین طبی سہولتیں فراہم کی جا سکیں۔وفد سے گفتگو کرتے ہوئے وزیراعظم نے کہا کہ خصوصی افراد کی تعلیم ،علاج معالجے کی سہولیات میں کوئی کوتاہی برداشت نہیں کی جائے گی۔انہوں نے کہا کہ خصوصی افراد معاشرے کا اہم حصہ ہیں ان کے بغیر معاشرہ نامکمل ہے۔انہوں نے کہا کہ خصوصی افراد،یتیموں اور بے سہارہ بزرگ خواتین و حضرات کے لیے 5 ارب روپے کی لاگت سے انڈومنٹ فنڈ قائم کر رہے ہیں جس کا مقصد ریاست کو حقیقی معنوں میں فلاحی ریاست بنانا ہے۔انہوں نے کہا کہ اس انڈومنٹ فنڈ کے ذریعے معاشرے کے بے سہارہ افراد کو ہر مہینے 20 ہزار روپے ان کے گھروں میں فراہم کئے جائیں گے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں